Aliwalay.com - 1039846572830063

Aliwalay.com
Aliwalay.com 416 Views
  • 20
  • 4
  • 1
Download MP4 SD 6.56MB
  • QR code for mobile device to download SD video

امام علی ج کے آخری روزے کی افطاری

آج کی رات امام علی ج افطار کرنے کے لیے اپنی بیٹی کے گھر تشریف لائے.

حضرت ام کلثوم ج فرماتی ہیں جب انیس رمضان کی شب ہوئی میں بابا کی خدمت میں افطار کے لیے ایک برتن لے گئی جس میں دوجو کی روٹیاں تھوڑا سا نمک اور دودھ کا پیالہ تھا.جب آپ نماز سے فارغ ہوئے تو دستر خوان کی طرف متوجہ ہوئے سر کو ہلایا زور زور سے گریہ شروع کردیا.فرمانے لگے- کیا کوئی بیٹی اپنے باپ کے ساتھ ایسا کرسکتی ہے جو تم نے کیا ہے!!

میں نے عرض کیا بابا جان میں نے کیا کیا؟

فرمایا: آپ نے ایک دستر خوان پہ دوکھانے لاکے رکھ دیئے کیا تم چاہتی ہو تیرا باپ بارگاہ رب العزت میں دیر تک کھڑا رہے؟ میں تو فقط اپنے بھائی رسول اللہ ج کی پیروی کرتا ہوں.جنہوں نے کبھی ایک دستر خوان پہ دو کھانے تناول نہیں فرمائے تھے.

بیٹی ایک چیز اٹھا لو میں نے دودھ کا پیالہ اٹھا لیا جو کی ایک روٹی نمک کے ساتھ تناول فرمائی.پھر شکر پروردگار ادا کرنے کے بعد دوبارہ مصلہ عبادت پر تشریف لے گئے اور رکوع و سجدے میں مصروف ہوگئے,کبھی کبھی صحن میں تشریف لاتے آسمان کی طرف نظر ڈال کے فرماتے تھے اللہ کی قسم نہ ہی میں نے جھوٹ بولا ہے اور نہ مجھ سے جھوٹ بولا گیا ہے یہ وہی رات ہے جس کا مجھ سے وعدہ کیا گیا ہے.پھر مصلے پہ تشریف لائے اور فرماتے اے اللہ میری موت میں چھ میرے لیے برکت قرار دے اور کثرت سے اناالله وانااليه رجعون اور حضور اکرم ج پر درود بھیجتے اور کثرت سے استغفار کرتے رہے میں نے پوچھا:بابا! آج رات آپ کی یہ کیفیت کیوں ہے؟

تھوڑی دیر قیام فرمایا پھر مصلے پہ عبادت میں مصروف ہوئے بیٹی ام کلثوم مجھے اذان صبح سے پہلے بتادینا کہ اذان کا وقت قریب ہونے لگا ہے.

پھر تیار ہوکے مسجد جانے لگے گھر میں موجود مرغابیوں نے شور کرنا شروع کردیا تو میں نے امام حسن ج سے کہا: حسن ج بھیا ان مرغابیوں نے اس سے قبل کبھی اس طرح کی چیخ و پکار نہیں کی تھی تو امیرالمومنین ج نے فرمایا: کچھ دیر بعد نوحے کی آواز بلند ہونگی.

امام مسجد میں تشریف لے گئے,گلدستہ اذان پہ جاکر اذان کہی کوفہ کے سب لوگوں کی آپ کی اذان کی آواز سنی.

پھر آپ گلدستہ اذان سے نیچے اُترے,پھر آپ نے مسجد میں سوئے ہوئے افراد کوجگانا شروع کردیا اور ہر سوئے ہوئے فرد سے کہتے کہ خدا تجھ پررحم کرے اُٹھو نماز پڑھو.آپ لوگوں کو جگاتے ہوئے ابن ملجم کے پاس آئے.وہ منہ کے بل لیٹا ہواتھا.اُس نے اپنی تلوار چھپائی ہوئی تھی.
امام ج نے اس سےفرمایا:اے شخص ! نیند سے بیدار ہو جا,اس طرح سے سونے کو خدا ناپسند کرتا ہے.یہ شیطان کے سونے کا انداز ہے اور یہ اہل دوزخ کے سونے کا انداز ہے.

پھر آپ نے اس لعین سے فرمایا: تو جو ارادہ لے کرآیا ہے یہ اتنا خوفناک ہے کہ اس سے آسمان پھٹ سکتے ہیں اور زمین ریزہ ریزہ ہوسکتی ہے.اگر میں چاہوں تو میں تجھے یہ بتاسکتا ہوں کہ تو نے کپڑوں میں کیا چھپا رکھا ہے.یہ کہہ کر آپ ع چلے گئے اور محراب میں تشریف لائے اور نماز شروع کی.آپ نے نماز میں طویل رکوع وسجود کیے.

ادھر وہ لعین تاریخ انسانیت کے بدترین جرم کے اقدام کی نیت سے اُٹھا اور چلتے ہوئے اس ستون کے قریب آیا جہاں آپ نماز میں مصروف تھے.آپ نے پہلی رکعت پڑھی اور پہلا سجدہ ادا کیا.پھر سر کو اُٹھایا.وہ لعین آگے بڑھا اور آپ کے سر اطہر پر تلوار کا وار کیا.

جبرئیل نے زمین و آسمان کے درمیان آواز دی جسے ہر سننے والے نے سنا.اللہ کی قسم آج ہدایت کے ارکان تباہ ہوگئے,آسمان کے ستارے اور تقویٰ کی نشانیاں ختم ہوگئیں,حضرت پیغمبر گرامی ص کے چچا زاد وصی حضرت علی ج قتل کردیئے گئے جسے بد بخت ترین شخص نے قتل کردیا.

(الانوار العلویہ,ص,٣٨٠,٣٨٨,مصائب معصومین ع,ص,٤١,٤٢,علی ج آمد سے شہادت تک,ص,٤٦٢,٤٦٣)
علی والے نیٹ ورک
WhatsApp messenger
+923313484627

Posted 1 year ago in NEWS